0

حسن علی کو اے کیٹیگری میں کیوں رکھا گیا فواد عالم کو کنٹریکٹ کیوں ملا؟ ڈائریکٹر ہائی پرفارمنس نے وجوہات بتانے کیساتھ ہی نئے ڈومیسٹک نظام کا فائدہ بھی بتا دیا

کراچی (آئی پی پی) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ڈائریکٹر ڈومیسٹک کرکٹ اینڈ ہائی پرفارمنس سینٹر ندیم خان نے کہا ہے کہ نیا ڈومیسٹک نظام پاکستان کرکٹ میں بڑی تبدیلی لے کر آئے گا تاہم نظام کو چلنے کیلئے وقت دیا جائے کیونکہ پھر ہی نتائج سامنے آئیں گے۔ 

تفصیلات کے مطابق نیشنل سٹیڈیم کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران پی سی بی کے ڈائریکٹر ڈومیسٹک کرکٹ اینڈ ہائی پرفارمنس سینٹر ندیم خان کا کہنا تھا کہ نیا ڈومیسٹک نظام پاکستان کرکٹ میں بڑی تبدیلی لے کر آئے گا، نظام کو چلنے کیلئے وقت دیا جائے اور کرکٹرز کو بھرپور اعتماد دیا جائے گا جبکہ صوبائی اور ڈسٹرکٹ ایسوسی ایشنز کا سیٹ جلد سامنے آجائے گا، کلبز رجسٹریشن کا آغاز کرنے جا رہے ہیں، انڈر19 ٹرائلز میں بعض کھلاڑی زیادتی کا شکار ہوگئے۔

ڈائریکٹر ڈومیسٹک کرکٹ اینڈ ہائی پرفارمنس ندیم خان کا کہنا تھا کہ حسن علی ٹیسٹ کرکٹر ہونے کے باعث اے کیٹیگری میں شامل کئے گئے، عمران خان سینئر کو پاکستان ٹیم میں ہونے کے باوجود سینٹرل کنٹریکٹ نہیں مل سکا جبکہ فواد عالم کو ٹاپ پرفارمر میں نہ شامل ہونے کے باوجود ٹیسٹ سکواڈ میں ہونے کی وجہ سے کنٹریکٹ ملا۔

ندیم خان نے کہا کہ کورونا وباءکے باوجود پی سی بی ڈومیسٹک کرکٹ شروع کرنے جا رہا ہے، قومی سطح پر بہترین کھلاڑیوں کو سامنے لانا چاہتے ہیں، ڈومیسٹک کنٹریکٹ مطلوبہ شرائط پوری کرنے والے کھلاڑیوں کو دئیے گئے ہیں جبکہ کھلاڑیوں کے معاوضوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔

ڈائریکٹر ڈومیسٹک کرکٹ اینڈ ہائی پرفارمنس ندیم خان کا کہنا تھا کہ حسن علی ٹیسٹ کرکٹر ہونے کے باعث اے کیٹیگری میں شامل کئے گئے، عمران خان سینئر کو پاکستان ٹیم میں ہونے کے باوجود سینٹرل کنٹریکٹ نہیں مل سکا جبکہ فواد عالم کو ٹاپ پرفارمر میں نہ شامل ہونے کے باوجود ٹیسٹ سکواڈ میں ہونے کی وجہ سے کنٹریکٹ ملا۔

ندیم خان نے کہا کہ کورونا وباءکے باوجود پی سی بی ڈومیسٹک کرکٹ شروع کرنے جا رہا ہے، قومی سطح پر بہترین کھلاڑیوں کو سامنے لانا چاہتے ہیں، ڈومیسٹک کنٹریکٹ مطلوبہ شرائط پوری کرنے والے کھلاڑیوں کو دئیے گئے ہیں جبکہ کھلاڑیوں کے معاوضوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں