3

روسی صحافی نے اپنا نوبل انعام یوکرینی پناہ گزینوں کیلئے10 کروڑ 35 لاکھ ڈالر میں نیلام کردیا

روسی صحافی
نوبیل انعام یافتہ روسی صحافی ڈمٹری موراتوف نے جنگ کے باعث بے گھر ہوجانے والے پناہ گزین یوکرینی بچوں کی مدد کے لیے اپنا میڈل 10 کروڑ 35 لاکھ ڈالر میں نیلام کردیا۔

پناہ گزینوں کے عالمی دن کے موقع پر نیویارک میں نیلامی کا اہتمام کرنے والے ادارے ’ہیریٹیج آکشن‘ کی جانب سے کہا گیا کہ اس نیلامی سے حاصل ہونے والی تمام رقم یوکرین کے بے گھر بچوں کے لیے یونیسیف کے انسانی ہمدردی کے اقدامات کو فائدہ پہنچائے گی۔

’نووایا گیزیٹا‘ اخبار کے چیف ایڈیٹر ڈمٹری موراتوف کے نوبل میڈل کی نیلامی نے ماضی میں نیلام کیے گئے کسی بھی نوبل میڈل کا ریکارڈ توڑ دیا ہے، اس سے قبل نیلام کیے گئے نوبل میڈلز کی زیادہ سے زیادہ فروخت محض 50 لاکھ ڈالر سے بھی کم تھی۔
ہیریٹیج آکشنز نے نیلامی سے قبل ایک بیان میں کہا کہ ’یہ ایوارڈ آج نیلام ہونے والی دیگر تمام اشیا سے مختلف ہے‘۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ ڈمٹری موراتوف اپنے اخبار کے عملے کے مکمل تعاون کے ساتھ ہمیں نہ صرف اپنے تمغے کو نیلام کرنے کی اجازت دے رہے ہیں بلکہ انہیں امید ہے کہ اس سے لاکھوں یوکرینی پناہ گزینوں کی زندگیوں پر مثبت اثر پڑے گا۔

ڈمٹری موراتوف نے 1991 میں ’نووایا گیزیٹا‘ اخبار کی مشترکہ بنیاد رکھی تھی، انہوں نے 2021 کا امن کا نوبل انعام فلپائن کی ماریا ریسا کے ہمراہ جیتا، اس موقع پر نوبل پرائز کمیٹی نے اظہار رائے کی آزادی کے تحفظ کے لیے ان کی کوششیں کو سراہتے ہوئے انہیں جمہوریت اور دیرپا امن کے لیے پیشگی شرط قرار دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں