6

سعودی عرب سے مذاکرات درست سمت میں جارہے ہیں، ایرانی وزیر خارجہ

ایران کے وزیرخارجہ حسین امیر عبداللہیان

ایران کے وزیرخارجہ حسین امیر عبداللہیان نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ مذاکرات ‘بہتر انداز’ میں ہوئے۔ جبکہ سعودی ایران بات چیت کے نتائج ملے ہیں۔

ایران کے وزیرخارجہ حسین امیر عبداللہیان نے لبنان کے دارالحکومت بیروت میں نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ ‘ایران اور سعودی عرب کے درمیان مذاکرات ایک اچھے انداز میں ہو ئے ہیں’۔

ایرانی وزیر خارجہ نے سعودی عرب کے ساتھ تعلقات میں بہتری کے لیے ہونے والی کوششوں کے حوالے سے میڈیا کو آگاہ کیا۔

مذاکرات کے حوالے سے ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا تھاکہ سعودی ایران بات چیت کے نتائج ملے ہیں لیکن ابھی مزید مذاکرات کی ضرورت ہے، بات چیت میں ہونے والے سمجھوتوں کا اعلان دونوں فریقین مناسب وقت پر کریں گے۔

ان کا مزید کہنا تجاکہ سفارتی تعلقات منقطع کرنے کا فیصلہ پہلے بھی ایران کا نہیں سعودی عرب کا تھا، جس طرح سعودی عرب خطے کا اہم ملک ہے اسی طرح ایران بھی ہے۔

قبل ازیں الجزیرہ کی رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی کم کرنے کے لیے نئے صدر ابراہیم رئیسی کی حکومت کے ساتھ سعودی عرب نے گزشتہ ماہ مذاکرات کیے تھے۔

سعودی وزیر خارجہ فیصل بن فرحان السعود نے ریاض میں یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزف بوریل کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ ایران کے ساتھ مذاکرات کا چوتھا دور 21 ستمبر کو ہوا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ مذاکرات ابھی ابتدائی مرحلے میں ہیں اور ہمیں امید ہے کہ یہ دونوں فریقین کے درمیان مسائل حل کرنے کے لیے بنیاد ہوں گے۔

فیصل بن فرحان نے مذاکرات کے حوالے سے مزید تفصیلات نہیں بتائی تھیں اور نہ مقام کا بتایا تھا جبکہ ان کے ساتھ موجود یورپی یونین کے عہدیدار نے اس بیان کا خیر مقدم کیا تھا۔

دوسری جانب ایرانی وزارت خارجہ نے کہا تھا کہ سعودی عرب کے ساتھ مذاکرات عراق کے دارالحکومت بغداد میں ہوئے تھے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے کہا تھا کہ مذاکرات کے لیے کسی بھی فریق کی جانب سے کوئی شرط نہیں رکھی گئی ہے اور اس وقت توجہ دو طرفہ تعلقات پر دی جارہی ہے تاہم خطے کے مسائل پر بھی بات ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں